RSS Feed

24 March, 2014 16:30

Posted on

NADEEM MALIK LIVE

samaa.tv/nadeemmaliklive/

24-MARCH-2014

طالبان سے مزاکرات شروع ہوئے پانچ چھ ماہ ہو چکے لیکن ابھی تک کوئی پیشرفت دکھائی نہیں دیتی۔ لطیف کھوسہ کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

اسلام آباد کچہری کے واقع کی طالبان نے زمہ داری قبول نہیں کی ہےلیکن یہ انہی کا کوئی ساتھی گروپ تھا۔ لطیف کھوسہ

حکومت نے طالبان کو ریاست کے برابر درجہ دے رکھا ہے جو درست نہیں ہے۔ لطیف کھوسہ

چوہدری نثار کو شرم آنی چاہئیے اسلام آباد کے واقع میں جج کو طالبان نے مارا لیکن انہوں نے کہا کہ گارڈ کی گولی لگی ہے۔ لطیف کھوسہ

طالبان معافی مانگیں تو انہیں اس شرط پر معاف کیا جا سکتا ہے کہ وہ آئندہ کوئی دہشت گردی نہیں کریں گے۔ شہزاد چوہدری

طالبان امن معاہدہ کریں اس پر دستخط کریں تو پھر انہیں اس کا پابند رہنا ہو گا۔ معین حیدر

طالبان کو صرف اس صورت میں معاف کیا جا سکتا ہے کہ وہ آئیندہ دہشت گردی نہیں کریں گے۔ معین حیدر

طالبان نے ساٹھ ہزار لوگوں کو مارا ہے انہیں معاف نہیں کیا جا سکتا۔ لطیف کھوسہ

طالبان معافی مانگنے کے لئیے تیار نہیں ہیں وہ اپنی ہر کاروائی کو ریاست کے کسی عمل کا ردعمل قرار دیتے ہیں لطیف کھوسہ

طالبان نے ریاست کے خلاف جرائم کئیے ہیں اور وہ انہیں معاف کر سکتی ہے۔ لطیف کھوسہ

ریاست اگر یہ کہے کہ وہ طالبان سے بدلہ لے گی تو اور بہت زیادہ خون بہے گا۔ معین حیدر

میرے خیال میں جون کا مہینہ طالبان سے مزاکرات کے لئیے آخری حد ہے اس کے بعد کاروائی ہو گی۔ شہزاد چوہدری

جون بہت لمبا عرصہ ہے اس سے بہت پہلے ملک میں امن ہو جانا چاہئیے۔ معین حیدر

دنیا میں اس کی بہت سی مثالیں ہیں کہ امن کے لئیے لوگوں کے جرائم کو معاف کیا گیا ہے۔معین حیدر

پاکستان اور امریکہ کے درمیان تعلقات کافی عرصے سے نیوکلئیر پروگرام اور دہشت گردی کے مسئلے کے گرد گھوم رہے ہیں۔ شہزاد چوہدری

بڑے عرصے کے بعد امریکہ میں پاکستان کے نیوکلئیر پروگرام پر کمفرٹ زون پایا گیا ہے۔ شہزاد چوہدری

اپنے نیوکلئیر پروگرام پر ہمیں کسی دوسرے نہیں بلکہ اپنے ملک کی تسلی چاہئیے۔ لطیف کھوسہ

امریکہ میں پاکستان کے نوکلئیر پروگرام پر بحث چلتی رہے گی جان کیری کے بیان سے یہ معاملہ ختم نہیں ہو گا۔ حسن عسکری

پاکستان کی ملٹری کے تعاون کے بغیر کوئی ہمارے نیوکلئیر ہتھیار نہیں لے جا سکتا اور یہ بات نا ممکن ہے۔ حسن عسکری

میرا پاکستان کے نیوکلئیر پروگرام کے تحفظ کی پالیسی سے تعلق رہا ہے یہ بہت محفوظ ہے۔ شہزاد چوہدری

دنیا پاکستان کے نیوکلئیر پروگرام اور دہشت گردی پر متفکر ہے پاکستان کو اس پر واضع موقف اختیار کرنا چاہئیے۔ شہزاد چوہدری

پاکستان کا نیوکلئیر پھیلاؤ اور دہشت گردی پر اتنا واضع موقف ہونا چاہئیے کہ کسی کو کوئی شک نہ رہے۔ شہزاد چوہدری

پاکستان کو ضیا۶الحق کی طرح امیرالمومنین بننے کے شوق میں اسلامی دنیا کے معاملات میں دخل نہیں دینا چاہئیے۔ لطیف کھوسہ

حکومت کے سعودیوں کے ساتھ مل کر شام کے باغیوں کے حق میں بیان دینے سے شکوک پیدا ہوئے۔ لطیف کھوسہ

اس وقت امریکہ میں لوگ پاکستان کے نیوکلئیر پروگرام کی سکیورٹی کے مسئلہ پر مطمئین دکھائی دیتے ہیں۔ معید یوسف

پاکستان کے نیوکلئیر پروگرام کے بارے میں امریکی خدشات مکمل طور پر کبھی ختم نہیں ہوں گے۔ معید یوسف

پاکستان کو فوری طور پر ایک قوم کے طور پر دنیا کے سامنے آنا ہے ملک میں امن لانا اور اسے مستحکم کرنا ہے۔ شہزاد چوہدری

ہمارا ملک آزاد ہو چکا ہے لیکن ہم ایک قوم نہیں ہیں ہم مختلف قومیتوں میں بٹے ہوئے ہیں۔ لطیف کھوسہ

پاکستان کو اپنے اندر سے خطرہ ہے ہمیں ملک سے دہشت گردی کو ختم کرنا ہو گا۔ لطیف کھوسہ

About NadeemMalikLive

NADEEM MALIK LIVE IS A FLAGSHIP CURRENT AFFAIRS PROGRAMME OF SAMAA.TV

Comments are closed.

%d bloggers like this: