RSS Feed

11 February, 2015 16:40

Posted on

NADEEM MALIK LIVE

samaa.tv/nadeemmaliklive/

11-FEB-2015

ایم کیو ایم نے ماضی میں بھی اپنے کارکنوں کی ہلاکتوں اور ہونے والی زیادتیوں پر آواز اٹھائی اور اب بھی اٹھا رہی ہے۔ وسیم اختر کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

جب بھی سینٹ، قومی اسمبلی یا لوکل گورنمنٹ کے الیکشن ہوتے ہیں تو سیاسی جماعتوں میں انڈرسٹینڈنگ ہوتی ہے۔ وسیم اختر

پیپلز پارٹی اور ایم کیو ایم علحیدہ علحیدہ جماعتیں ہیں کبھی ایک دوسرے کے سامنے ہوتی ہیں تو کبھی مل کر الیکشن لڑتی ہیں۔ سعید غنی

بجائے اس کے کہ سینٹ کی سیٹ کی بولی لگے تو بہتر ہے کہ دونوں جماعتیں آپس میں انڈر سٹینڈنگ کر لیں۔ سعید غنی

ایم کیو ایم کے حکومت میں ہوتے ہوئے بھی اگر ان کے کسی بندے نے کوئی جرم کیا تو اس کے خلاف کاروائی کی گئی۔ سعید غنی

بارہ مئی اور سانحہ ماڈل ٹاؤن کی جے آئی ٹی کا میں مکمل طور پر انکار کرتا ہوں یہ غلط ہیں۔ وسیم اختر

جب کسی سیاسی جماعت کو نیچا دکھانا ہوتا ہے تو سانحہ بلدیہ ٹاؤن جیسی جے آئی ٹی بنتی ہیں۔ وسیم اختر

جے آئی ٹی میں ملک کی تین چار ایجنسیاں شامل ہیں سندھ حکومت اس کی رپورٹ کو رد نہیں کر سکتی۔ سعید غنی

جے آئی ٹی کی رپورٹ کو ابھی عدالت میں جانا ہے وہاں فیصلہ ہو گا کہ یہ ٹھیک ہے یا غلط ہے۔ سعید غنی

سانحہ بلدیہ ٹاؤن کسی سیاسی جماعت یا اس کے لیڈر پر ثابت ہو جائے اور ہم کاروائی نہ کریں تو پھر ہم سے بڑا بیضمیر کوئی نہیں ہو گا۔ سعید غنی

ایم کیو ایم حقیقی کے آفاق احمد نے ایک سال پہلے جے آئی ٹی کی موجودہ رپورٹ سنا دی تھی۔ وسیم اختر

بارہ مئی سے پہلے گورنر ہاؤس کی میٹنگ میں پولیس سے اسلحہ لینے کا کوئی فیصلہ نہیں ہوا تھا۔ وسیم اختر

بارہ مئی کے واقع میں تمام سیاسی جماعتیں ملوث ہیں۔ وسیم اختر

اگر ایم کیو ایم اور پیپلز پارٹی ایک دوسرے کی دشمن ہوتیں تو آج بھی کراچی کی گلیوں میں خون بہہ رہا ہوتا۔ وسیم اختر

بارہ مئی کے واقع کے پیچھے کچھ اور لوگ ہیں ان کا پتہ لگاناچاہئیے۔ وسیم اختر

سیاسی جماعتوں میں تلخیاں ہوں توانہیں ختم ہونا چاہئیے اور آگے بڑھنا چاہئیے۔ سعید غنی

قانون نافز کرنے والی ایجنسیوں میں کچھ کالی بھیڑیں ہیں ان کا پتہ لگایا جانا چاہئیے۔ وسیم اختر

About NadeemMalikLive

NADEEM MALIK LIVE IS A FLAGSHIP CURRENT AFFAIRS PROGRAMME OF SAMAA.TV

Comments are closed.

%d bloggers like this: