RSS Feed

29 January, 2016 06:38

Posted on

NADEEM MALIK LIVE

http://videos.samaa.tv/NadeemMalik/

28-JANUARY-2016

میرے خیال میں راحیل شریف نے اپنا سارا بوجھ اتار دیا ہے کھیل اب شروع ہوا ہے۔آج کے واحد مہمان شیخ رشید احمد کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

میں اپنی بات کہ مارچ اپریل موجودہ حکومت پر بھاری ہو اب بھی قائم ہوں۔

حکومت باتیں کر رہی تھی کہ راحیل شریف کا کوئی انٹرسٹ ہے پنجاب کی بھی باری لگ گئی ہے اب پنجاب میں بھی کھیل شروع ہو گا۔

وزیراعظم دس دن تک ڈائیووس میں بیٹھے رہے مجھے بتایں کہ کیا انوسٹمنٹ ہے ایک بڑا زیرو ہے۔

وزیراعظم لندن بیٹھے ہوئے ہیں ملک جل رہا ہے آگ اور خون کے ساتھ ہولی کھیل جا رہی ہے۔

سکول بند ہیں کالج بند ہیں پانی بند ہے روزگار بند ہے ٹیکسٹائل بند ہے بجلی بند ہے فصلوں کا برا حال ہے۔

جنرل راحیل شریف نے کل کراچی میں چھ گھنٹے کی میٹنگ کی ہے میں نہیں سنا کہ آج تک کسی آرمی چیف نے اتنی لمبی میٹنگ کی ہو۔

ابھی صرف ایک شخص ڈاکٹر عاصم کے خلاف کام شروع ہوا ہے تو سیاست دان چیخ رہے ہیں۔

آرمی چیف کا اتنی لمبی میٹنگ کرنے کا مطلب یہ ہے کہ وہ سنجیدہ ہیں اور اگر سیاست دانوں نے روڑے اٹکائے تو کرپشن کے خلاف آپریشن روتھلیس بھی ہو سکتا ہے۔

سب کا احتساب شروع ہونے جا رہا ہے پنجاب میں بھی ہو گا تو موجودہ حکومت اس کے راستے میں روڑے اٹکائے گی۔

کرپشن اور دہشت گردی کا چولی دامن کا ساتھ ہے وہ ایل این جی ہو یا میٹرو ہو سب پر بحث ہو گی۔

پاکستان پر برا وقت ہے د وہزار سولہ خونی سال ہے مجھے صاف دکھائی دے رہا ہے۔

حکومت نے اس ملک کی معیشت کو تباہ کر دیا ہے کوئی ایک چیز ایسی نہیں جو کہے کہ اس نے ٹھیک کر دی ہے۔

پی آئی اے کے لئیے ایسے جہاز لئیے ہیں جو دبئی تک نہیں جا سکتے ان میں وہ آلات نہیں ہیں جو دو ڈھائی گھنٹے سے زیادہ سروس دے سکیں۔

سندھ حکومت کے پیچھے نواز شریف کھڑے ہیں اور یہی بات فوج کو کھٹک رہی ہے اس کے دل کو زرداری کی بات لگ چکی ہے کہ میرے بعد تواہڈی واری اے۔

نواز شریف چار سدہ کے واقع کے بعد ڈایووس گئے دس دن لندن میں بیٹھے رہے میرے خیال میں وہ کوئی منصوبہ بندی کر رہے ہیں۔

میرے خیال میں سول اور عسکری دونوں طرف ایک آگ جل رہی ہے جو شعلہ جوالہ بننے جا رہی ہے۔

فروری میں کام شروع ہو گا مارچ اپریل تک فائنل ہو جائے گہ کہ کیا ہم نے اسی طرح چلنا ہے یا کوئی بہتری لانی ہے۔

واشنگٹن پوسٹ نے کہا ہے کہ راحیل شریف کو توسیع نہ لینے کا فیصلہ جمہوریت کے لئیے تو اچھا ہو سکتا ہے لیکن ریاست کے لئیے شاید نہ ہو۔

راحیل شریف کا خاندان نشان حیدر اور شہیدوں کا خاندان ہے ان کے اور جنرل کیانی کے خاندان میں بہت فرق ہے۔

آصف زرداری ستائیس دسبر کو پاکستان آتے تو ان کو دھر لیا جاتا اس بات میں کوئی شک نہیں ہے۔

لوگ کہتے ہیں کہ عزیر بلوچ اسلام آباد کے کسی پہاڑی علاقعے میں ہے۔

میں آئندہ آنے والے دنوں میں جھگڑا اور معاملات کو الجھتا ہوا دیکھ رہا ہوں۔

پاکستان پر ایک غیر اعلانیہ جنگ مسلط کر دی گئی ہوئی ہے اور اس کے پیچھے بھارت ہے۔

بھارت چاہتا ہے کہ گوادر اور چائنہ پاک منصوبے رک جایں۔

اسحق ڈار دنیا کا ناکام ترین وزیر خزانہ ہے اس نے پانچ بار بلیک منی والوں کو ایمنسٹی دی۔

جس دن قوم نے سوچ لیا کہ دہشت گردی میں مرنے والا بچہ کے پی کے میں نہیں پنڈی میں مرا ہے یہ مسئلہ حل ہو جائے گا۔

اسحق ڈار، خواجہ آصف، اور چوہدری نثار نواز شریف کے تین سینٹر فارورڈ ہیں لیکن تینوں کا آپس میں رابطہ نہیں ہے۔

اب تو گول کیپر کو گول سے باہر آ کر سنٹر فارورڈ کے طور پر کھیلنا پڑے گا۔

جب تک کرپٹ لوگوں کو نہیں پکڑا گیا پاکستان ہمارے بچوں کے لئیے محفوظ نہیں بن سکتا۔

ایک طرف بھارت ہے تو دوسری طرف طالبان ہیں اس وقت قوم کو فوج کے ساتھ کھڑا ہونا پڑے گا۔

پاکستان میں سیاست کچھ عرصے کے لئیے ڈیپ فریزر میں لگنے جا رہی ہے۔

اسلام آباد ائیر پورٹ نیلم جہلم منصوبہ ساہیوال کول پاور پلانٹ کوئی منصوبہ اٹھا لیں اربوں کا گھپلا ہے۔

دو بندے حصہ لے لیتے ہیں جب غریب کی باری آتی ہے تو کہتے ہیں کہ جمہوریت خطرے میں ہے۔

فوج جو مرضی کر لے سیاست دان فوج سے بہت زیادہ چالاک ہوتے ہیں۔

قوم نے راحیل شریف کی طرف دیکھا ہے مجھے یقین ہے کہ آئندہ دس ماہ میں وہ دہشت گردی پر قابو پا لیں گے۔

سارا ملک جل رہا ہے اور نواز شریف دس دن تک لندن میں آرام کرتا رہا اسے ملک کے حالات میں کوئی دلچسپی نہیں ہے۔

میں بھارت کے ساتھ معاملات خراب ہوتے دیکھ رہا ہوں محکمہ موسمیات کا غبارہ بھی آ جائے تو پاکستان پر الزام لگا دیتے ہیں۔

پاکستان میں جمہوریت کے لئیے دو ہزار سولہ آخری سال ہو گا۔

About NadeemMalikLive

NADEEM MALIK LIVE IS A FLAGSHIP CURRENT AFFAIRS PROGRAMME OF SAMAA.TV

Comments are closed.

%d bloggers like this: