RSS Feed

18 August, 2016 15:55

Posted on

NADEEM MALIK LIVE

http://videos.samaa.tv/NadeemMalik/

18-AUGUST-2016

ایم کیو ایم کے کچھ تحفظات ٹھیک بھی ہیں ان کے لوگ اٹھائے جاتے ہیں۔ شرمیلا فاروقی کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

چاہے کوئی بھی ہو اس کے خلاف قانون کے مطابق کاروائی ہونی چاہئیے۔ شرمیلا فاروقی

ایم کیو ایم نے پہلے بھی اسمبلیوں سے استعفے دئیے تھے لیکن پھر واپس آ گئے تھے۔ شرمیلا فاروقی

اگر اس دفعہ ایم کیو ایم نے اسمبلیوں سے استعفے دئیے اور واپس نہ لئیے تو اب تک سب سے بڑی تعداد میں ضمنی الیکشن ہوں گے۔ شرمیلا فاروقی

کسی کو اٹھایا جائے اور بعد میں اس کی تشدد شدہ لاش ملے تو یہ ٹھیک نہیں ہے چاہے اس کا کسی بھی سیاسی جماعت سے تعلق ہو۔ شرمیلا فاروقی

اس وقت ایم کیو ایم کے ایک سو بتیس کارکنان مسنگ ہیں اور باسٹھ کی تشدد شدہ لاشیں ملی ہیں۔ علی رضا زیدی

ایم کیو ایم کے ساڑھے پانچ ہزار کارکن ایسے ہیں کہ جن کے خلاف کیسز رجسٹرڈ کئیے گئے اور وہ جیلوں میں ہیں۔ علی رضا زیدی

ایم کیو ایم کے اسمبلیوں سے استعفے دینے کا فیصلہ رابطہ کمیٹی کرے گی ہو سکتا ہے کہ یہ فیصلہ ایک دو دن میں آ جائے۔ علی رضا زیدی

آج سندھ کے چیف جسٹس نے کہا ہے کہ اگر وہ کیس سنیں گے تو ان کی اور ان کے بچوں کی جان کو خطرہ ہے۔ جنرل غلام مصطفی

کراچی میں صرف رینجرز ہی نہیں بلکہ سیاسی جماعتوں کے ملٹری ونگز بھی دوسری جماعتوں کے لوگوں کا اٹھاتے ہیں۔ جنرل غلام مصطفی

سیاسی قائدین کو یہ بھی سوچنا چاہئیے کہ رینجرز انتہائی ٹینس صورت حال میں کام کر رہے ہیں جہاں ہر وقت ان کی جان کو خطرہ ہے۔ جنرل غلام مصطفی

میری ایم کیو والوں سے اپیل ہے کہ وہ اپنی تکلیف بتایں کہ ہم ان کے لئیے کیا کر سکتے ہیں ان کے اسمبلیوں سے باہر آنے سے کچھ نہیں ہو گا۔ شاہ محمود قریشی

جو ایم کیو ایم کی جائز شکایات ہیں وہ دور ہونی چاہئییں لیکن جنہوں نے جرم کیا ہے انہیں ان سے علحیدگی اختیار کرنی چاہئیے۔ شاہ محمود قریشی

ہم نے بہت دفعہ اسمبلیوں میں آواز اٹھائی ہے اور کئی بار اسمبلیوں سے احتجاجاْ باہر بھی آئے ہیں۔ علی رضا زیدی

ہم کسی وقت حکومت کے خلاف احتجاج کے لئیے تحریک انصاف سے بھی مل سکتے ہیں لیکن اس سے پہلے ان کو ہمارا دکھ بھی شئیر کرنا ہو گا۔ علی رضا زیدی

پیپلز پارٹی چاہے گی کہ پہلے حکومت کے خلاف قانونی طریقے اختیار کئیے جایں اگر کچھ نہ ہوا تو پھر سڑکوں پر احتجاج کے علاوہ کوئی راستہ نہیں رہ جائے گا۔ شرمیلا فاروقی

وزیراعظم اپنی تقریر میں تو کہتے ہیں کہ وہ احتساب کے لئیے حاضر ہیں لیکن عملی طور وہ ایسا نہیں کر رہے۔ شرمیلا فاروقی

پاناما کے مسئلے پر ایم کیو ایم سمیت جو بھی ہمارے ساتھ آنا چاہے گا ہم اسے خوش آمدید کہیں گے۔ شاہ محمود قریشی

سیاسی طور پر ملک میں افراتفری کی ْصورت حال ہے پاناما لیکس پر اپوزیشن جو متحد دکھائی دیتی تھی اب ایسا نہیں ہے۔ جنرل غلام مصطفی

خیال یہ ہے کہ ایم کیو ایم احتجاج کر کے حکومت کو سپیس دینا چاہتی ہے اور اندرون خانہ ایم کیو ایم اور پیپلز پارٹی میں بھی گٹھ جوڑ دکھائی دیتا ہے۔ جنرل غلام مصطفی

ہمیں حکومت سے کچھ نہیں چاہئیے وقت کے ساتھ ساتھ ہماری ہڑتال بڑھتی جائے گی۔ علی رضا زیدی

About NadeemMalikLive

NADEEM MALIK LIVE IS A FLAGSHIP CURRENT AFFAIRS PROGRAMME OF SAMAA.TV

Comments are closed.

%d bloggers like this: