RSS Feed

25 August, 2016 02:08

Posted on

NADEEM MALIK LIVE

http://videos.samaa.tv/NadeemMalik/

24-AUGUST-2016

ایم کیو ایم کے کچھ اندرونی مسائل ہیں اس جماعت کو لندن رابطہ کمیٹی چلاتی تھی اور وہ اس پر اپنے تحفظات رکھتے تھے۔آج کے واحد مہمان وزیراعلی سندھ سید مراد علی شاہ کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

ایم کیو ایم کو پاکستان سے چلایں لیکن جس طرح کی غداری کی باتیں انہوں نے کی ہیں وہ سندھ اور پاکستان کو لوگوں کے لئیے قابل قبول نہیں ہو گا۔

ایم کیو ایم واقعی پاکستان سے چلائی جائے گی اس کا آگے چل کر پتہ چلے گا ابھی کچھ نہیں کہا جا سکتا۔

ایم کیو ایم نے بائیس اگست کو جو کچھ کیا اس پر ہم نے فوری طور پر کاروائی کی لیکن ہم کوئی ایسی چیز بھی نہیں کرنا چاہتے تھے کہ جس سے حالات اور خراب ہوں۔

اللہ کے فضل سے ایک گھنٹے میں حالات کنٹرول ہو گئے اور کچھ لوگوں کو گرفتار بھی کر لیا گیا۔

ایم کیو ایم کے جن لوگوں نے اشتعال دلایا ان کے خلاف ایک مقدمہ قائم بھی کر دیا گیا ہے۔

رینجرز اور پولیس نے بائیس اگست کو کہیں چھاپہ نہیں مارا بلکہ ایم کیو ایم کے لوگوں کو بلایا ان کو ہنگامے کی وڈیو دکھائی اور انہوں نے ان لوگوں کی شناخت کی۔

وڈیو میں کچھ خواتین بھی پاکستان کے خلاف نعرے لگا رہی ہیں ان کے خلاف بھی قانون کے مطابق کاروائی ہو گی ان کی شناخت ہو چکی ہے۔

الطاف حسین کیے خلاف کاروائی کرنے کے لئیے ہمیں وفاقی حکومت کی مدد کی ضرورت ہے چوہدری نثار آج آیں گے تو ان سے بات ہو گی۔

بائیس اگست کے واقع کے بعد میں نے کراچی اور سندھ کے لوگوں سے کہا تھا کہ کل ہم معمول کے مطابق کام پر جایں گے اور اگلے دن معمول کے مطابق کام ہوا۔

میں نے لوگوں سے کہا تھا کہ آپ سو جایں سندھ حکومت جاگ رہی ہے،

الطاف حسین کی باتوں سے خون کھولتا ہے لیکن انہیں میڈیا سے مکمل طور پر نکال دینا ممکن نہیں ہے۔

عام لوگوں کا فرض ہے کہ الطاف حسین کی تقریر کی مزمت کریں اور اس میں شرکت بالکل نہ کریں۔

تئیس اگست کو الیکشن کمشن نے ہم سے پوچھا کہ کیا مئیر کا الیکشن ملتوی کرنا چاہتے ہیں تو میں نے کہا کہ نہیں ہم نہیں چاہتے۔

میں نے کہا کہ جس جماعت نے الیکشن جیتا ہے میں اس سے اس کا حق نہیں چھیننا چاہتا۔

میں نے ایم کیو ایم کے لوگوں سے بات کی ہے کہ ہم ایم کیو ایم کو ختم نہیں کرنا چاہتے لیکن اگر آپ قانون کے مطابق کام نہیں کریں گے تو پھر نتائج بھگتنے پڑیں گے۔

میرے رینجرز کے ساتھ پہلے بھی اچھے تعلقات تھے اور اب بھی ہیں۔

رینجرز ساتئیس سالوں سے کراچی میں ہے شاید ہی دو چار بار ایسا ہوا ہو کہ ان کو وقت پر توسیع دے دی گئی ہو ورنہ ہمیشہ دو چار دن اوپر ہو جاتے ہیں۔

اب میڈیا وقت گننا شروع کر دیتا ہے کہ اتنے گھنٹے اتنے منٹ اور پھر اتنے سیکنڈ رہ گئے ہیں لیکن رینجرز کے اختیارات میں توسیع نہیں کی گئی۔

میں نے جمعہ کو حلف اٹھایا اور پیر کو رینجرز کے اختیارات کی کی توسیع کے بل پر دستخط کر دئیے تھے۔

رینجرز آپریشن صرف کراچی کے لئیے شروع کیا گیا تھا باقی سندھ میں صورت حال بری نہیں ہے۔

اگر کوئی مجرم کراچی سے بھاگ کر سیون چلا جائے تو کراچی پولیس سیون پولیس سے رابطہ کر لیتی ہے۔

رینجرز آپریشن تب کامیاب ہو گا جب کراچی پولیس اپنے پاؤں پر کھڑی ہو گی اور اپنی زمہ داری اٹھائے گی۔

میں کراچی سے خوف کی فضا ختم کرنے کی کوشش کر رہا ہوں ایم کیو ایم کے ہنگامے کے بارہ گھنٹے کے بعد شہر کی صورت حال معمول کے مطابق تھی۔

بحریہ ٹاؤن کی زمین کے متعلق کیس عدالت میں ہے اس لئیے میں اس پر کوئی تبصرہ نہیں کروں گا۔

عدالت کے فیصلے کے بعد جو بھی ضروری کاروائی کرنے کی ضرورت ہو گی کی جائے گی۔

میں نے قائم علی شاہ کے ساتھ آٹھ سال کام کیا ہے وہ اپنے فیصلے خود کرتے تھے۔

قائم علی شاہ کے بارے میں یہ تاثر بن گیا تھا کہ وہ اپنے فیصلے خود نہیں کرتے تھے کوئی اور کرتا تھا۔

میں بھی اپنی لیڈر شپ سے مشورہ کرتا ہوں لیکن میں جو فیصلہ کروں گا اس کی زمہ داری بھی لوں گا۔

ہم نے کراچی کی ترقی کے لئیے ایکی پیکیج بنایا ہے اور میں خود اس کی نگرانی کر رہا ہوں۔

میں کراچی میں ہونے والے کام کی نگرانی خود کر رہا ہوں لیکن فوٹو بنوانے کے لئیے نہیں کر رہا۔

تھر کی صورت حال بہت بری نہیں ہے ہم اس کے لئیے کام کر رہے ہیں۔

About NadeemMalikLive

NADEEM MALIK LIVE IS A FLAGSHIP CURRENT AFFAIRS PROGRAMME OF SAMAA.TV

Comments are closed.

%d bloggers like this: