RSS Feed

23 November, 2016 15:59

Posted on

NADEEM MALIK LIVE

http://videos.samaa.tv/NadeemMalik/

23-NOVEMBER-2016

بھارت میں ایک انتہا پسند حکومت ہے پاکستان نے آج تک انتہا پسندوں کے منتخب نہیں کیا۔ خالد مقبول صدیقی کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

مودی کو دنیا میں بچر آف مسلمز کہا جاتا ہے پاکستان کو دنیا کو یہ یاد کروانا چاہئیے۔ خالد مقبول صدیقی

بھارت اس وقت ایک سیکیولر ملک نہیں ہے اس سے غیر جانبدار ملک کا اسٹیٹس واپس لے لینا چاہئیے۔ خالد مقبول صدیقی

بھارت بہت آگے بڑھ رہا ہے یہ بڑی خطرناک بات ہے یہ کشمیر سے دنیا کی توجہ ہٹانے کی کوشش ہے۔ شفقت محمود

روز بارڈر پر اور مسافر بس پر حملہ بھارت کے جنون کو ظاہر کرتا ہے۔ شفقت محمود

وزیراعظم نےترکی کے صدر سے بھارتی جارحیت پر بات کی اور امریکہ اور انگلینڈ کے ساتھ بھی سفارت کاری جاری ہے۔ خرم دستگیر خان

مسئلہ کشمیر پر تمام سیاسی جماعتیں متحد ہیں اور ہم اس مسئلے پر جوائینٹ سیشن بھی کال کر رہے ہیں۔ خرم دستگیر

پاکستان کے عوام کو بھی بتانا چاہئیے کہ وہ سڑکوں پر آ کر بھارت کے خلاف احتجاج کریں۔ خالد مقبول صدیقی

پاکستان کو سکیورٹی کونسل، او آئی سی کے فورم کو استعمال کرنا چاہئیے ہمارے ڈپلومیٹک فرنٹ سے کوئی حرکت دکھائی نہیں دے رہی۔ شفقت محمود

ہمارے خارجہ معاملات کو کون چلا رہا ہے بالکل واضع نہیں ہے ہمیں دنیا کو بھارت کی خلاف ورزیوں سے آگاہ کرنا چاہئیے۔ شفقت محمود

بھارت نے آج انتہا کر دی ہے اور مسافر بس پر حملہ کر کے دس لوگوں کو شہید کر دیا ہے۔ راجہ فاروق حیدر

بھارت پاکستان کے ساتھ جنگ کرنا چاہتا ہے لیکن ہم نے ایسا نہیں کرنا یہ کمزوری نہیں حکمت عملی ہے۔ راجہ فاروق حیدر

ہم اپنی مرضی سے پاکستان کے ساتھ شامل ہوئے ہم پر کوئی زبردستی نہیں ہے اللہ نے ہمیں اکٹھا کر دیا ہے۔ راجہ فاروق حیدر

کشمیر کے لوگ آزادی کی تحریک کو آگے بڑھا رہے ہیں لیکن بھارت دہشت گردی کا الزام لگا کر توجہ ہٹانا چاہتا ہے۔ میر واعظ عمر فاروق

بھارت میں الیکشن ہونے والے ہیں مودی چاہتا ہے کہ ووٹ حاصل کرنے کے لئیے پاکستان کے ساتھ دشمنی کو بڑھایا جائے۔ میر واعظ عمر فاروق

پاکستان کو اب سفارتی سطح پر بھی کوششوں کو تیز کرنا ہو گا اور اسلامی ممالک کو ساتھ ملانا چاہئیے۔ میر واعظ عمر فاروق

پاکستان کے ڈی جی ایم او نے آج بھارت کوکہا ہے کہ ہم اپنی مرضی سے وقت اور جگہ کا انتخاب کر کے جواب دینے کا حق محفوظ رکھتے ہیں۔ خرم دستگیر

وہ مودی جسے دنیا بچر کہتی تھی اسے اپنا پارٹنر بنا لیا ہے پاکستان کو کھل کردنیا سے اس مسئلے پر بات کرنی چاہئیے۔ خالد مقبول صدیقی

ہم نے کہا ہے کہ اس وقت بھارت جو کچھ کر رہا ہے ملک کو تزبزب میں نہیں چھوڑا جا سکتا۔ شیری رحمان

کیا آج تک کسی نے سنا ہے کہ کشمیر کمیٹی کا کشمیر پر کیا کردار ہے انہوں نے کبھی کچھ نہیں کیا۔ شیری رحمان

وزارت خارجہ کچھ نہیں کر رہی کمیٹیاں بن رہی ہیں لیکن کوئی کام نہیں ہو رہا۔ شیری رحمان

نوابزادہ نصراللہ خان کے دور میں کشمیر کمیٹی بہت فعال تھی اب نہیں ہے۔ شیری رحمان

مولانا فضل الرحمان کو کشمیر سے کوئی دلچسپی نہیں ہے انہیں بس ایک گاڑی اور عہدہ چاہئیے ہوتا ہے۔ شفقت محمود

کشمیر کمیٹی سے کچھ نہیں ہوتا کمٹمنٹ سے ہوتا ہے جو دکھائی نہیں دیتی مولانا کو صرف گاڑی میں گھومنے کا شوق ہے۔ خالد مقبول صدیقی

حکومت نے مولانا فضل الرحمان کو صرف سیاسی طور پر کشمیر کمیٹی میں ایڈجسٹ کیا ہوا ہے۔ خالد مقبول صدیقی

میری شفقت محمود صاحب سے اپیل ہے کہ پی ٹی آئی منافقت چھوڑے اور کشمیر کے مسئلے پر کل پارلیمنٹ میں آئے۔ خرم دستگیر

About NadeemMalikLive

NADEEM MALIK LIVE IS A FLAGSHIP CURRENT AFFAIRS PROGRAMME OF SAMAA.TV

Comments are closed.

%d bloggers like this: