RSS Feed

13 December, 2016 06:57

Posted on

NADEEM MALIK LIVE

www.samaa.tv/videos/NadeemMalik

12-DECEMBER-2016

جنید مجھ سے صرف ایک سال بڑے تھے اور بچپن میں ہم دونوں مل کر شرارتیں کیا کرتے تھے۔ آج کے واحد مہمان جنید جمشید کے بھائی ہمایوں جمشید کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

جمشید جب دین کی طرف آ گئے تو ہم اور بھی قریب آ گئے اور آپس میں وہ چیزیں بھی شئیر کرنے لگے جو کبھی ہم کرتے ہیں اور کبھی نہیں کرتے۔

جنید میرا ایک اچھا بھائی تو تھا ہی لیکن ایک اچھا دوست بھی تھا۔

ہمارے والد ائیر فورس میں فائٹر پائیلٹ تھے اور جنید کو بھی پائلٹ بننے کا بہت شوق تھا۔

جنید کے چار بچے ہیں اس کے تین بیٹے اور ایک بیٹی ہے حادثے میں جاں بحق ہونے والی ان کی دوسری بیوی تھیں۔

جنید کے بچوں کو بھی گانے اور نعتیں پڑھنے کا بہت شوق ہے لیکن وہ پروفیشنل سنگر نہیں بننا چاہتے۔

جنید کا ایک دوست اس کا نام بھی جنید ہی تھا جنید کو دعوت تبلیغ کے کام کی طرف لے کر آیا۔

جنید کا دوست اسے کراچی میں ایک مسجد میں لے گیا اور پھر مولانا طارق جمیل نے اس کا ہاتھ پکڑ لیا۔

شروع شروع میں جنید نے ہلکی داڑھی رکھی ہوئی تھی وہ سٹیج پر شو کر رہا ہوتا تھا اور پیچھے اس کے تبلیغی جماعت کے لوگ بیٹھےہوتے تھے۔

شو کے بعد تبلیغی جماعت کے دوست اسے ساتھ تبلیغ پر لے جاتے تھے شروع میں میوزک اور تبلیغ مکس اینڈ بلینڈ کے طور پر چلتا رہا۔

پیپسی کا اشتہار نہ کرنا وہ پوائنٹ تھا کہ جہاں جنید نے میوزک کو مکمل طور پر چھوڑ دیا۔

پیپسی کا کنٹریکٹ چار کروڑ روپے کا تھا ایک طبقہ کہتا تھا کہ کر لو لیکن ایک کہتا تھا کہ امتحان ہے نہ کرو اللہ تمہیں جائز زرائع سے بھی وافر رزق دے سکتا ہے۔

جنید نے پیپسی کا چیک پھاڑ دیا اور بہت رویا کہ اللہ مجھے معاف کر دے میں نے تیرے رازق ہونے پر شک کیا۔

حقوق اللہ بہت بڑی چیز ہیں لیکن حقوق العباد ہمارے دین کا بہت بڑا حصہ ہیں اور حقوق العباد کا تعلق اخلاق کے ساتھ ہے۔

اخلاق کی تعلیمات ہمیں قرآن اور حضرت محمد صلی اللہ علیہ وصلم کی احادیث سے ملتی ہیں۔

جنید اور میں بات کرتے تھے تو وہ کہتا تھا کہ جہاں نا انصافی ہو وہاں خیر نہیں ہو سکتی

کراچی کی صفائی مہم میں جنید نے حصہ لیا وہ کہتا تھا کہ یہ کام ہم نہیں کریں گے تو کوئی اور بھی نہیں کرے گا۔

جنید اب ہر چیز کو انصاف کے ساتھ جوڑتا تھا کہ کیا بات ہے کہ امیر کے گھر کے باہر تو صفائی ہے لیکن غریب کے گھر کے باہر گندگی پڑی ہوئی ہے۔

دل دل پاکستان گانا جنید کی جان تھا اس میں کوٹ کوٹ کر پاکستانیت بھری تھی۔

جب جنید شہید ہوا تو میرا دل بہت غمگین تھا لیکن جب میں نےدیکھا کہ پورا ملک اس کا سوگ منا رہا ہے تو میری ڈھارس بندھی۔

جنید کی شہادت پر مجھے پوری دنیا سے فون آئے مجھے فرانس سے کسی نے فون کیا کہ وہ اپاہجوں کے سنٹر میں کام کرتا ہے اور جنید اس سے اس سلسلے میں بات کرتا تھا۔

آج کل جنید سوچ رہا تھا کہ مدارس کے طلبا کو دینی تلعیم کے علاوہ پروفیشنل تعلیم بھی دی جانی چاہئیے۔

جنید کی لاش کو اسلام آّباد سے کراچی لایں گے ائیر فورس بیس پر ایک چھوٹی سی تقریب ہو گی اور پھر معین خان اکیڈمی میں جنازے کے لئیے لایں گے۔

جنید کو دارالعلوم کراچی میں دفن کیا جائے گا جنید کی وصیت تھی کہ اسے وہاں دفن کیا جائے۔

جنید کے جنازے میں چوبیس گھنٹے کا وقت دیا جائے گا تا کہ تمام لوف جنازے میں شرکت کر سکیں۔

جنید صرف میرا نہیں بلکہ پورے پاکستان کا بھائی تھا۔

Advertisements

About NadeemMalikLive

NADEEM MALIK LIVE IS A FLAGSHIP CURRENT AFFAIRS PROGRAMME OF SAMAA.TV

Comments are closed.

%d bloggers like this: