RSS Feed

29 March, 2017 17:26

Posted on

NADEEM MALIK LIVE

www.samaa.tv/videos/NadeemMalik

29-MARCH-2017

ہم سب کی نفسیات بن چکی ہے کہ جب کوئی پکڑا جائے یا کسی کو سزا ہو تو ہم بہت خوش ہوتے ہیں۔ عرفان قادر کی

ندیم ملک لائیو میں گفتگو

افتخار چوہدری کے دور میں نیب کے چیرمین اور دوسرے لوگوں کو بلا لیا جاتا تھا اور دھڑا دھڑ کیس بنائے جا رہے تھے۔ عرفان قادر

ڈاکٹرعاصم پر دہشت گردی کا کیس بہت کمزور تھا اور بعد میں ان پر کرپشن کا کیس بنایا گیا اور اسے دہشت گردی سے منسلک کر دیا گیا۔ عرفان قادر

اس طرح کے کیس بننے ہی نہیں چاہئییں سپریم کورٹ کو اپنی حد کے اندر رہنا چاہئیے۔ عرفان قادر

پاکستان کی موجودہ سپریم کورٹ خود کو چوہدری کورٹ سے دور کرنا چاہے گی۔ عرفان قادر

نیب کا موجودہ چیرمین اتنا کمزور ہے کہ سپریم کورٹ روز اسے بلا لیتی ہے حالانکہ عدالت اسے نہیں بلا سکتی۔ عرفان قادر

چیرمین نیب کا حکومت اور اپوزیشن نے مل کر تقرر کیا تھا اب دیکھ لیں کہ نواز شریف اور زرداری ان کے بارے میں کیا بیانات دے رہے ہیں۔ یار محمد رند

یہ بات درست ہے چیرمین نیب کی کیا مجال ہے کہ وہ نواز شریف یا زرداری کے خلاف کیس بنائے۔ یار محمد رند

چیرمین نیب نے چند چھوٹے چھوٹے کیس بنانے کی کوشش کی تو نواز شریف اور ان کے چہیتے چھوٹے بھائی چیخ پڑے۔ یار محمد رند

چیرمین نیب عنقریب ریٹائر ہونے والے ہیں اور بعد میں ان جیسا ہی ایک اور چیرمین لایا جائے گا۔ یار محمد رند

بلوچستان کے ایک کلرپٹ چیف سیکٹری کو ابھی ریٹائر کر کے نیپرا میں لگا دیا ہے اور اسے ایوارڈ دیا گیا ہے۔ یار محمد رند

بلوچستان کے فنانس سیکریٹری کو پکڑ کر مثال بنا دیا گیا ہے اس کے پیچھے جو زورآور تھے انہیں بھی پکڑیں۔ یار محمد رند

پیپلز پارٹی کے دور میں بلوچستان میں آٹھ سو پچاس ارب روپے کی کرپشن ہوئی ہے۔ یار محمد رند

حکومت اور اپوزیشن جب ایک دوسرے کو ننگا کرتی ہیں تو یہ بات ملک کے لئیے بہت اچھی ہے۔ رانا افضل

میں بہت خوش ہوں ادھر کے چور بھی پکڑے جایں گے اور ادھر کے چور بھی پکڑے جایں گے۔ رانا افضل

پیپلز پارٹی نے جمہوریت کی خاطر قربانیاں دی ہیں زرداری کی طرح ڈاکٹر عاصم بھی عدالتوں میں پیش ہوتے رہے۔ منظور وسان

شرجیل میمن دبئی سے آ کر مقدمات کا سامنا کرنے کے لیے عدالت میں پیش ہوئے تو کہا جا رہا ہے کہ ڈیل ہو گئی ہے۔ منظور وسان

سیف الرحمان نے پیپلز پارٹی کے خلاف جھوٹے مقدمات بنائے بعد میں زرداری کے پاؤں میں گر کر معافی مانگی۔ منظور وسان

ایان علی کو ایک ڈیل کے نتیجے میں چھوڑا گیا، یار محمد رند

رنیجرز نے ڈاکٹر عاصم کو پکڑا کیس بنایا اب اگر پراسیکیوشن کیس نہ بنانا چاہے تو ملٹری اسٹیبلشمنٹ کیا کر سکتی ہے۔ اعجاز اعوان

جن لوگوں نے ایان علی کو ملک سے جانے دیا انہوں نے خود کو اور ملک کو بدنام کیا۔ اعجاز اعوان

ایان علی عدلیہ کے فیصلے سے باہر گئیں ہم یہ نہیں کہہ سکتے کہ عدلیہ بھی ڈیل کا حصہ بن گئی ہے۔ عرفان قادر

ایان علی اور ڈاکٹر عاصم کے خلاف مقدامت کی سب کو زمہ داری لینا ہو گی میں دعا ہی کر سکتا ہوں کہ پاکستان میں سب کچھ ٹھیک ہو جائے۔ رانا افضل

مشرف ملک سے باہر گیا کوئی نہیں بولا ایک ایان علی اور رجیل میمن کا نام لیا جا رہا ہے۔ منظور وسان

پنجاب کے پی کے اور بلوچستان میں کرپشن ہو رہی ہے لیکن الزام صرف سندھ پر لگایا جاتا ہے۔ منظور وسان

مجھے معلوم ہے پیپلز پارٹی کے کون کون سے لوگ رات کی تاریکی میں مشرف کو ملتے تھے میں ثبوت دے سکتا ہوں۔ یار محمد رند

وزیر داخلہ رحمان ملک رات کے اندھیرے میں مشرف سے ملنے جاتے تھے۔ یار محمد رند

بھٹو اور بینظیر کی جمہوریت کی خاطر بہت قربانیاں ہیں لیکن اس کا مطلب یہ نہیں ہے کہ اب پیپلز پارٹی ملک کے ساتھ جو چاہے کرے۔یار محمد رند

ملٹری نے حسین حقانی کے بارے میں جو کہا تھا وہ سچ نکلا لیکن میرا اپنے ادارے سے گلہ ہے کہ بعد میں وہ پیچھے کیوں ہٹ گیا۔ اعجاز اعوان

حسین حقانی نے اپنے منہ سے تمام الزامت کو مان لیا وزیراعظم اور آرمی چیف کو اس کے خلاف عدالت جانا چاہئیے۔ اعجاز اعوان

آج آرمی چیف اور ڈی جی آی ایس آئی کیوں خاموش ہیں انہیں حسین حقانی کے آرٹیکل کے بعد عدالت جانا چاہئیے۔ یار محمد رند

حکومت اور اسٹیبلشمنٹ دونوں کا احتساب ہونا چاہئیے۔ اعجاز اعوان

http://naeemmalik.wordpress.com/

Advertisements

About NadeemMalikLive

NADEEM MALIK LIVE IS A FLAGSHIP CURRENT AFFAIRS PROGRAMME OF SAMAA.TV

Comments are closed.

%d bloggers like this: