RSS Feed

11 July, 2017 18:15

Posted on

NADEEM MALIK LIVE

www.samaa.tv/videos/NadeemMalik

11-JULY-2017

سپریم کورٹ نے کہا تھا کہ وہ جے آئی ٹی کی رپورٹ کے مطابق فیصلہ کرے گی کہ اس نے آگے کیا کرنا ہے۔ وسیم سجاد کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

جے آئی ٹی رپورٹ سے منی لانڈرنگ، کرپشن اور زرائع سے زیادہ آمدنی کے الزامات سامنے آ گئے ہیں۔

جے آئی ٹی کی رپورٹ کےمطابق نواز شریف کے اپنے نام پر ابھی ایک کمپنی نکل آئی ہے۔

نواز شریف پر آئین کے آرٹیکل باسٹھ اور تریسٹھ کا بھی اطلاق ہوتا ہے اور اس پر سپریم کورٹ خود فیصلہ دے سکتی ہے۔

میرے خیال میں پیر کو سپریم کورٹ دونوں طرف کے وکلا کے دلائل سنیں گے کہ آگے کیا ہونا چاہئیے۔

میرے خیال میں جے آئی ٹی رپورٹ کے کچھ معاملات پر سپریم کورٹ خود فیصلہ کرے گی اور کچھ پر ٹرائیل ہو گا۔

دبئی جسٹس ڈیپارٹمبنٹ نے کہا ہے کہ ان کے پاس گلف سٹیل کا پیسہ قطر یا کسی اور ملک میں جانے کا کوئی ریکارڈ نہیں ہے۔

وزیراعظم کو اب سوچنا چاہئیے کہ اب انہیں کیا کرنا ہے ابھی گیم ان کے ہاتھ میں ہے ایسا نہ ہو کہ صورت حال ان کے ہاتھ سے نکل جائے۔

اگر سپریم کورٹ نے نواز شریف کو نااہل قرار دے دیا تو اس کے ان کے ان کی پارٹی اور ملک کے لئیے بہت نتائج ہوں گے۔

پی ٹی آئی کی شیریں مزاری نے کہا کہ

نواز شریف نے کہا تھا کہ اگر ان کے خلاف کچھ بھی نکل آیا تو وہ استعفی دے دیں گے۔ شیریں مزاری

اب تو نواز شریف کے خلاف دستاویزات میں ہیرا پھیری اور سپریم کورٹ کے ساتھ فراڈ کا کیس بھی بن گیا ہے۔

مریم نواز سپریم کورٹ میں یہ کہتی رہیں کہ وہ بینفشل اونر نہیں ہیں۔

مسلم لیگ ن کے ڈاکٹر مصدق ملک نے کہا کہ

جے آئی ٹی کی رپورٹ ان لئیے چیلنجنگ ہے لیکن حیرت کا باعث نہیں کیونکہ وہ ایک تعصب پر مبنی رپورٹ کی ہی توقع کر رہے تھے۔

مسلم لیگ ن نے یہ کبھی نہیں کہا کہ مریم نواز نیلسن اور نیسکون کی سگنیٹری نہیں ہیں۔

ہمارا آج بھی یہی موقف ہے کہ مریم نواز بینفشل اونر نہیں ہیں۔

مسلم لیگ ن جے آئی ٹی کی رپورٹ کے خلاف سپریم کورٹ میں باقاعدہ کیس لڑے گی۔

کوشش کی جا رہی ہے کہ وزیر اعظم کے خاندان کا کوئی فرد نہ بچے۔

جے آئی ٹی کو قطری شہزادے کے پاس جا کر سوالات کرنے میں کیا حرج تھا۔

http://naeemmalik.wordpress.com/

Advertisements

About NadeemMalikLive

NADEEM MALIK LIVE IS A FLAGSHIP CURRENT AFFAIRS PROGRAMME OF SAMAA.TV

Comments are closed.

%d bloggers like this: